الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

حاضری دربارِ اقدس حضرت بابا فرید الدین مسعودگنجِ شکرؒ

May 3, 2013

عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشانِ اسلام (رجسٹرڈ)پنجاب کے مختلف علاقوں جن میں فیصل آبادسے حاجی محمد سلیم قادری کی زیرِ صدارت 170ذاکرین کے علاوہ ٹوبہ،سمندری،سرگودھا،جوھر آباد،بورے والااورپاکپتن کے مقامی ساتھیوں کی کثیر تعداد نے حضرت بابا فرید الدین مسعودگنجِ شکرؒ کے دربارِاقدس پر 2مئی 2013 ؁ء بروز جمعرات بوقت رات 1بجے خصوصی محفل نعت و ذکرِ لطائف منعقد کی ۔محفل پاک میں مرکزی عالمی امیر حضرت علامہ مولانا سعید احمد قادری کے علاوہ ممبر مجلس شوریٰ حاجی محمد اویس قرنی سمیت مختلف علاقوں کے ذمہ داران نے خصوصی شرکت کی ۔اس پروگرام کا انعقاد مختلف شہروں کے ساتھیوں کی آپس میں ملاقات اور رابطے کا بہترین نمونہ ثابت ہوااور تمام ذاکرین نے محفل پاک میں شرکت کی اورفیوض و برکات حاصل کئے۔
مرکزی عالمی امیر علامہ مولانا سعید احمد قادری نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے فرمایا کہ مُرشدِ پاک حضرت سیّدنا ریاض احمد گوھر شاھی مدظلہ العالی کی خاص نظر رحمت ہمیشہ ذاکرین کے ساتھ شامل حال رہتی ہے ۔آج ہماری خوش قسمتی ہے کہ ہم سب ایک کامل ذات ہستی کے دربارِ اقدس پرحصول فیض کے لئے حاضر ہیں ۔قر آنِ پاک میں رب تعالیٰ کا ارشاد مبارک ہے کہ “اللہ کے ولیوں کو نہ کوئی خوف ہے اور نہ کوئی ڈر” یعنی جو ولی اللہ (اللہ کا دوست) بن جاتا ہے وہ اللہ کے سوا کسی سے خوفزدہ نہیں ہوتا۔مزید فرمایا”اللہ کا ذکر کثرت سے کرو”اللہ تعالیٰ حکم دے رہا ہے مومنین کو کہ” اے ایمان والو! اللہ کا ذکر کثرت کے ساتھ کرو” کثرتِ ذکر کو مومنین کے ساتھ مشروط کر دیا گیا یعنی جو مومن ہو گا وہی کثرتِ ذکرِ الٰہی کرے گا اور مومن کون ہے ؟جس کی زبان بھی اللہ اللہ کرے اور جس کا دِل بھی اللہ اللہ کرے وہ مومن ہے ۔یہی انجمن سرفروشانِ اسلام پاکستان اور مُرشدِ کریم کا پیغام ہے آؤ اگر اللہ کے نام لیواؤں میں شامل ہونا چاہتے ہو تو زبان کے ساتھ ان دلوں کی خالی دھڑکنوں کو اللہ اللہ میں لگا لو۔ اسی میں دنیا و�آخرت کی بھلائی پوشیدہ ہے ۔
کمیپئرنگ کے فرائض محمد شفیق قادری (فیصل آباد) نے سرانجام دئیے ۔انہوں نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے فرمایا کہ بابا صاحب نے 36سال عبادت و ریا ضت میں گزارے ۔دن کو روزہ رکھتے اور رات کو اپنے رب کی عبادت کرتے ۔اس لئے آپ کو زہدہ الانبیاء کا لقب عطاء ہوا۔آپ سلسلہء چشت کے جید اولیاء اکرام میں سے ہیں ۔آپ کی شکر والی کرامت سے ہر خاص و عام واقف ہے ۔ایک دفعہ کچھ مسافر اونٹوں پر شکر لاد کر جارہے تھے ۔آپؒ نے ان سے پوچھا کہ کیا یہ شکر ہے ؟تو انہوں نے کہا کہ نہیں یہ نمک ہے تو آپؒ نے فرمایا کہ نمک ہی ہو گا۔جب وہ تاجر اپنی منزلِ مقصود پر پہنچے تو دیکھا کہ نمک تھا ۔وہ واپس آکر شر مسار ہوئے اور معافی طلب کی تو باباجی نے فرمایا کہ پہلے بھی تم کہہ رہے تھے کہ نمک ہو گا ہم نے یقین کر لیا اب بھی تم کہہ رہے ہو کہ شکر ہے تو ہم بھی یہی کہہ رہے ہیں کہ شکر ہے تاجروں نے واپس جا کر دیکھا تو وہ شکر تھی ۔نائب امیر پنجاب اطہر حسین بخاری نے ارشاد فرمایا کہ جس طرح ظاہری طور پر شہروں میں بسنے والے اپنے آپ کو زندہ تصور کرتے ہیں اور قبرستان میں بسنے والوں کو مُردہ قرار دیا جاتا ہے لیکن جو لوگ اپنے قلوب زندہ کر لیتے ہیں تو وہ دنیا میں بھی زندہ اور ظاہری طور پر پردہ کرنے کے بعد بھی زندہ رہتے ہیں جیسا کہ حضرت بابا فرید الدین گنجِ شکرؒ زندہ ہیں اور یہی نسخہ ء کیمیا ہمارے پیرو مرشد نے ہمیں بتایاہے کہ اپنے مردہ قلوب کو زندہ کر لو تاکہ ہمیشہ کی دوامی زندگی حاصل ہو سکے ۔محفل پاک میں حمدِ باری تعالیٰ کی سعادت فیصل آباد سے تشریف لائے ہوئے ساتھی محمد منور نے حاصل کی ۔اسکے بعد نعت خوانی کا سلسلہ شروع ہوااور بارگاہِ رسالتِ مآب ﷺ میں عقیدت و محبت کے نذرانے اسامہ گوھر،محمد ریاض(سرگودھا)،ظفر عباس(فیصل آباد)،محمد طاھر (ٹوبہ)محمود احمد اور شاہد لطیف محمد منور (فیصل آباد ) نے پیش کئے۔اسکے بعد بارگاہِ غوث الوراءؓ میں ہدیہء عقیدت خرم شہزاد(بورے والا)نے پیش کیا۔
حاجی محمد اویس قرنی نے محفلِ ذکرِ لطائف کو ترتیب دیا۔درودوسلام کے نذرانے عبدالعزیزقادری(فیصل آباد)نے پیش کئے اور مرکزی عالمی امیر حضرت علامہ مولانا سعید احمد قادری نے اختتامی دعا فرمائی۔محفلِ پاک کے اختتام پر تمام شرکاء محفل نے دربار شریف پر حاضری دی ۔بعد ازاں تمام ذاکرین میں لنگر تقسیم کیا گیا۔

005 004 002 003 001

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان