الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

رپورٹ جشنِ ولادتِ خاتونِ جنت (سلام اللہ علیہا)

April 29, 2014

عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشانِ اسلام(رجسٹرڈ) پاکستان ،فیصل آباد کے زیر اہتما م آستانہ عالیہ پر حضرت سیّدہ طیبہ طاہرہ بی بی فاطمتہ الزہرہ (سلام اللہ علیہا)کے جشن ولادتِ بسعادت کے سلسلہ میں خصوصی محفلِ پاک کا انعقاد کیا گیاجس میں نقابت کے فرائض اطہر اقبال نے سرانجام دئیے۔محفلِ پاک میں حمدِ باری تعالیٰ کی سعادت محمد افتخار بٹ نے حاصل کی ۔اسکے بعد بارگاہِ رسالتِ مآب ﷺمیں عمران الحق قادری اور محمد جمیل قادری نے عقیدت و محبت کے نذرانے پیش کئے۔
جناب اطہر اقبال نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے فرمایا کہ خاتونِ جنت (سلام اللہ علیہا)کی ذاتِ والا صفات پہلی سلطان الفقراء ہیں ۔سیّدہء کائنات کاگھرانہ اہلِ بیت ہے ۔عصمتِ فاطمہؓ کے گواہ خود محمدِ مصطفی ﷺ ہیں اور آپؓ کے پردے اور حیاء کا عالم یہ ہے کہ سردارِملائکہ حضرت جبریلِ امیں بغیر اجازت کے گھر میں داخل نہیں ہوتے تھے ۔حضرت ابو سعید خذریؓ نے اللہ تعالیٰ کے ارشادِ مبار کہ’’ اے اہلِ بیت!اللہ تو یہی چاہتا ہے کہ تم سے ہر طرح کی آلودگی دور کر دے‘‘ کے بارے میں ارشاد فرمایا کہ یہ آیتِ مبارکہ پانچ ہستیوں ۔۔۔حضور نبی اکرمﷺ،حضرت علیؓ ،حضرت فاطمہؓ ،حضرت حسنؓ ،حضرت حسینؓ ۔۔۔کے بارے میں نازل ہوئی۔انہوں نے مزید فرمایا کہ سیّدہ (سلام اللہ علیہا)سب جہانوں کی سردار ہیں ۔سیّدہء سلام اللہ علیہاجنتی عورتوں کی اور آپؓکے شہزادے جنتی جوانوں کے سردار ہیں ۔ سیدہ فاطمہ (سلام اللہ علیہا)کی والدہ افضل النساء ہیں۔اللہ تعالیٰ نے فاطمہؓ اور آلِ فاطمہؓ پر جہنم کی آگ حرام کر دی ہے ۔فرمانِ رسولﷺہے کہ فاطمہؓ !میرے ماں باپ تجھ پر قربان ہوں۔حضورﷺآمدِ فاطمہ(سلام اللہ علیہا) پرمحبتاًکھڑے ہوجاتے،ہاتھ چومتے اور اپنی نشست پر بٹھا لیتے۔حضورﷺ سیّدہ (سلام اللہ علیہا)کی نشست کیلئے اپنی کملی مبارک بچھا دیتے۔سفرِمصطفیﷺکی ابتداء اور انتہابیتِ فاطمہ (سلام اللہ علیہا)سے ہوتی ۔ سیّدہ (سلام اللہ علیہا)روئے زمین پر حضور ﷺکی محبت کا مرکزِخاص ہیں۔سیّدہء سلام اللہ علیہا لختِ جگرِ مصطفی ﷺہیں۔ سیّدہ (سلام اللہ علیہا)کی رضا۔۔۔مصطفیﷺکی رضااور سیّدہ (سلام اللہ علیہا)کی ناراضگی ۔۔۔مصطفیﷺکی ناراضگی ۔ سیّدہ فاطمہ(سلام اللہ علیہا)خفا تو اللہ خفا۔۔۔ان کی رضااللہ کی رضا۔حضرت زید بن ارقمؓسے روایت ہے کہ حضور ﷺنے حضرت فاطمہؓ ، حضرت حسنؓ اور حضرت حسینؓ سے ارشاد فرمایا ’’جو تم سے لڑے گامیں اُس سے لڑوں گااور جو تم سے صلح کرے گا میں اُس سے صلح کروں گا‘‘۔
حضرت عائشہ صدیقہؓ ارشاد فرماتی ہیں کہ بعد از مصطفی ﷺافضل ترین ہستی سیّدہ زہراء سلام اللہ علیہا ہیں۔حضرت عمرِفاروقؓ فرماتے ہیں کہ بعد از مصطفی ﷺمحبوب ترین ہستی سیّدہ زہراء سلام اللہ علیہا ہیں۔پیرو مرشد قبلہ ء عالم حضرت سیّدنا ریاض احمد گوھر شاھی مدظلہ العالی ارشاد فرماتے ہیں ہم روزانہ حضرت بی بی فاطمتہ الزہرہء سلام اللہ علیہاکی یاد میں فاتحہ کا اہتما م کیا کرتے تھے اور لال باغ میں دورانِ چلہ جب ہم بھوک کی وجہ سے کمزوری محسوس کر رہے تھے تو ایک شخص اپنے ہاتھوں میں سیبوں سے بھری ہوئی پلیٹ لے کر حاضر ہو ا یہ وہی پلیٹ تھی جس میں سیب کاٹ کرمیں راولپنڈی میں فاتحہ دیا کرتا تھااُس نے عرض کی یہ سیب سیدہء کائنات نے آپ کے لئے بھیجے ہیں اور ارشاد فرمایا ہے’’کہ آپ حالتِ خوشی میں ہم کو یاد کیا کرتے تھے آج حالتِ غمی میں ہم نے تم کو یاد کیا ہے‘‘ غرض کہ آپؓ کی صفات کا احاطہ الفاظ میں بیان نہیں کیا جا سکتا۔صرف اتنا کہا جا سکتا ہے کہ جس نے بھی اس اہلِ بیت کے گھرانے سے وفا کی ،اُس نے دونوں جہانوں کی رحمتیں اور برکتیں اپنے دامن میں سمیٹ لیں اور جنہوں نے اس مقدس گھرانے سے بغض و عناد رکھا اُن کیلئے دونوں جہانوں میں ذلت و رسوائی کے سوا کچھ نہیں ہے ۔
حضور غوث الاعظم سرکارؓکی بارگاہِ اقدس میں نذرانہء منقبت اظہر حسین قادری نے پیش فرمایا۔سیّد اطہر حسین بخاری نے مرشدِ برحق حضرت سیّدنا ریاض احمد گوھر شاھی مد ظلہ العالی کے حضور قصیدہ کی سعادت حاصل کی ۔انوارالحق قادری نے حلقہء ذکر کو ترتیب دیااور ملکِ پا کستان کی ترقی و خوشحالی کے لئے دعائے خیرو برکت محمد یسین قادری نے ادا فرمائی۔اختتامِ محفل پر شرکا میں لنگر تقسیم کیا گیا۔
جاری کردہ
شعبہ نشرو اشاعت فیصل آباد

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان