الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

سالانہ جشن ِولایت ِگوھر شاھی مد ظلہ العالی2016 فیصل آباد

June 17, 2016

عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشان ِاسلام(رجسٹرڈ)پاکستان،فیصل آبادکے زیر ِاہتمام سالانہ جشن ِولایت ِگوھر شاھی مدظلہ العالی(پندرھویں شریف) کا ڈویژنل پروگرام16جون2016؁ ء بروز جمعرات بعد از نماز ِتراویح رات 11بجے سابقہ بندو خان ہوٹل باالمقابل گورنمنٹ سٹاف ٹریننگ کالج حشمت خاں روڈنزدڈی گرائونڈفیصل آبادمیں نہایت عقیدت و احترام سے منعقد کیا گیا۔اس پروگرام میں علاقائی امیران و مشیران سمیت سرفروش ذاکرین کی کثیر تعداد نے شرکت فرما کر مرشد ِپاک سے اپنی والہانہ عقیدت و محبت کا اظہار کیااور محفل ِپاک کے روحانی فیوض و برکات سے فیض یا ب ہوئے ۔
عالمی امیر جناب ِمحترم حضرت علامہ مولانا سعید احمد قادری نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ امیر ِفیصل آباد حاجی محمد سلیم قادری صاحب اوراُن کے مشیران،ڈویژنل انچارج محمد شفیق قادری صاحب،اُن کے رفقاء ،مرکزی ذمہ داران حاجی محمد اویس قادری،محمد رضوان گوھر(لاہور)،علاقائی امیران (سمندری ،ٹوبہ ،جھنگ ،جوھر آباد،کمالیہ ،پیر محل )و مشیران،سینئر سرفروش ذاکرین اور تما م شرکاء محفل سب کو جشن ِشاھی کی مبارک باد پیش کرتا ہوں ۔ڈویژنل انچارج محمد شفیق قادری نے کہا کہ ایسی کرامتیں بیان کی جائیں جن کا پہلے تذکرہ نہیں ہوا۔ایسی کرامات جو عام لوگوں کے علم میں نہیں ہیں ۔
حضرات ِمحترم !سب سے پہلے تو ہمیں یہ پتہ ہونا چاہیے کہ کرامت کسے کہتے ہیں ؟کرامت کیا ہوتی ہے ؟سرکار کی جو سب سے بڑی کرامت ہے وہ کسی کے دل کو ،مردہ دل کوز ندہ کر دینا ہے ۔کسی مردے کو زندہ کرنا اتنی بڑی کرامت نہیں ہے وہ زندہ رہنے کے بعد پھر مَر جائے گا۔جس ہستی نے سینوں میں قلوب کو زندہ کیا وہ ابدالاباد تک کے لئے زندہ ہو جائے گااور اس جیسی سرکار کی لاکھوں کرامتیں ہیںکہ انہوں نے مردہ دلوں کو اپنی نظر ِنور سے زندہ وجاوید کردیا ہے جو قبرو حشر تک اللہ اللہ کرتے رہیں گے۔
پروگرام کے بارے میں انہوں نے کہامیں تمام انتظامیہ ،سٹیج،لائٹنگ،سائونڈکے علاوہ جن جن احباب نے اس جشن شاھی کو کامیاب کرنے کے لئے اپنی پنی خدمات سرانجام دیں اور دے رہے ہیں اور خصوصاعباد علی عباد اور اُن کی قوال پارٹی کو کہ جنہوں نے اپنی محبتوں اور شفقتوں کے نذرانے پیش کئے۔سب کو مبارک باد پیش کرتا ہوں لیکن یہ سب کچھ ہم نے اپنی مرضی سے ترتیب دیا ہے ۔یہ پروگرام اس وقت تک پایہء تکمیل کو نہیں پہنچ سکتا اور اُس وقت تک کامیاب نہیں ہوسکتا جب تک اس میں وہ بات نہ کی جائے جو سرکار کی مرضی کی ہو ۔یہ تو ساری ہماری مرضی ہے ۔اصل بات یہ ہے کہ وہ بات لوگوں کو بتائی جائے جو سرکار کی مرضی کی ہے (ذکر ِقلب )۔
سرکار شاہ صاحب ہمارے مرشد ہیں اور مرشد رشدو ہدایت کا منبع ذات ہو تی ہے ۔سرکار نے اللہ کی ذات کی خاطر ساری کا ئنات کو چھوڑ دیا تھا۔لعل باغ میں جاکر اللہ کے ساتھ سرکار نے اپنا رابطہ قائم کر لیا ۔جب یہ سارا معاملہ ہو چکا تو اللہ کی طرف سے سرکار کو حکم ہوا کہ اب دوبارہ دنیا میں جائیں اور وہ روحیںجن کو میری بارگاہ میں بھیجنا ہے ۔اُن کا رابطہ مجھ (اللہ) سے قائم کروائیں ۔
آج کا جو جشن منایا جارہا ہے ۔اُ سکی نسبت 15رمضان المبارک سے ہے ۔یہ وہ مبارک دن ہے جب سرکار کی ڈیوٹی دنیا میں لگی تاکہ لوگوں کا رابطہ اللہ سے کروایا جا سکے اور سرکار شاہ صاحب کو سرکار ِدوعالم ﷺکا دیدار کروایا گیا۔شاہ صاحب جو اس دنیا کو چھوڑ چکے تھے ۔اُن کو دوبارہ دنیا میں بھیج کر مجھ جیسے نکمے اور آپ جیسے لوگوں کااللہ سے رابطہ کروایا گیا۔اب اس رابطے کو قائم رکھنا ،اس کو مضبوط رکھنایہ میرا ور آپ سب کا کام ہے ۔جتنا ہم سب اس رابطے کو مضبوط رکھیں گے اور اُس پیغام ِخاص کو ،اُس مشن کو دوسرے لوگوں تک پہنچائیں گے یہ میرے اور آپ کے پیارے مرشد کی خوشنودی کا باعث ہو گا۔سرکار نے فرمایا کہ مجھے جشن ِولادت سے زیادہ جشن ِشاھی کی خوشی ہوتی ہے ۔اس کی وجہ کیا ہے ؟یہ وہ دن ہے جب اللہ رب العزت نے اپنے شرف کا،عزت کا تاج سجا کر قبلہ مرشد ِپا ک کو دوبارہ اس دنیا میں بھیجاجس کا یہ نتیجہ ہے کہ آج ہم کو ئی کسی علاقے سے ،کوئی کہیں سے آیا ہے اور یہاں بیٹھ کرہم سب سرکار کا جشن ِشاھی منا رہے ہیں ۔ایسے ماحول میں ایسے لگتا ہے کہ ہم سب ایک ہی قبیلے سے تعلق رکھتے ہیں ۔ہمارا ایک ہی خاندان ہے جو سرکار کی نظر ِکرم کے طفیل ہے اورقرآن ِپاک کی آیا ت کی عین ترجمانی ہے۔
حضرات ِمحترم!یہ پیغام کیا ہے ؟یہ ذکر ِقلب کا پیغام ہے ۔ذکر ِقلب کیا ہے ؟ پروردگار ِعالم نے ارشاد فرمایاکہ آنکھیں اندھی نہیں ہوتی ،یہ دل اندھے ہوتے ہیں ۔یہ جو قلب سینوں میں ہیں یہ اندھے ہوتے ہیں ۔جن لوگوں کے قلب اللہ کی یادے سے غافل ہوجائیں ،اندھے بھی ہوتے ہیں ،وہ گونگے بھی ہوتے ہیں وہ بہرے بھی ہوتے ہیں ۔ارشاد ِباری تعالیٰ ہے ۔فرمایا اُس شخص کی اطاعت نہ کرو کہ جس کے قلب کو ہم نے اپنے ذکر سے غافل کردیا ۔ایسا شخص جس کا قلب اللہ کی یاد سے غافل ہو جائے ۔وہ اپنے نفس کی اطاعت پہ چلتا ہے اور آپ جانتے ہیں کہ نفس شیطان ہے اور شیطان انسان کو تباہی کی طرف لے جاتا ہے اور اُس کا کام بھی شیطانی ہے ۔
مولانا سعید احمد قادری نے کہا کہ ہمارے لئے یہ خوشی کا موقع ہے ۔خوشی کا دن ہے کہ آج کے دن اللہ تبارک وتعالیٰ نے مرشد ِپاک کو ہمارے لئے چناہے ۔ہمارے لئے دنیا میں بھیجا ہے ورنہ آج ہم بھی دنیا کی دلدل میں پھنسے ہوتے ۔انہوں نے تشریف لا کر ہمیں دنیا کی غلاظتوں سے نکالا۔ہمار ے سینوں ،ہمارے قلوب میں اسم ِذات اللہ کا پودا لگایااور اس پودے کی آبیاری کرنا ہم سب کاکام ہے۔سلطان العارفین ارشاد فرماتے ہیں ۔
الف اللہ چنبے دی بوٹی مرشد من وچ لائی ھو نفی اثبات کا پانی ملیا ہر رگے ہر جائی ھو
اندر بوٹی مُشک مچایا جان پھلن تے آئی ہو جیوے مرشد کامل باھو جس اے بوٹی لائی ھو
آج ہم سب اللہ کا شکر ادا کرتے ہیں کہ جس ذات نے حضرت سیدناریاض احمد گوھر شاھی مد ظلہ العالی جیسی ہستی ہمیں عطاء کی ۔مرشد ِکریم نے تشریف لا کر ہمیں دنیا سے نکالا۔ہمارا تعلق اللہ کے ساتھ جوڑ دیا۔ہم سب کو آج کے اس دن کی نسبت سے اس تعلق کو جو مرشد ِپاک نے ہمارا اللہ کی ذات کے ساتھ قائم کردیا۔اللہ پاک سے دعا ہے کہ وہ ہمیں اس کو قائم ودائم رکھنے کی توفیق عطاء فرمائے ۔(آمین)
آخر میں جو نئے ساتھی ہیں اور چاہتے ہیں کہ اُن کے دل میں بھی اللہ کا نام آجائے ۔اُن کے قلب اللہ کے ذکر سے بیدار ہو جائیں۔طریقہ ہم بتا دیتے ہیں جو مرشد ِکریم نے ہمیں بتایا ہے ۔یاد رکھیں یہ وہ آفاقی پیغام ہے کہ جو لوگ سرکار کی بارگاہ میں تشریف لائے ۔سرکار نے اپنی نگاہ ِکیمیا ء سے انہیں اسم ِذات اللہ کا ذکر ِقلب عطاء کیااور قیامت تک آنے والے سارے لوگوں کیلئے سرکار نے اپنی کتاب مینارہء نور میں لکھ دیا ہے ۔عمل ِاکسیر کے نام سے ۔جوبھی کرنا چاہتاہے ۔طریقہ اُس کتاب کے اندر لکھ دیا ہے اور قیامت تک آنے والے لوگ ہدایت حاصل کر سکتے ہیں جو لوگ ذکر ِقلب حاصل کرنا چاہتے ہیں وہ میری آواز کے ساتھ آواز ملا کر دل کی ایک دھڑکن کے ساتھ اللہ اور دوسری کے ساتھ ھو ملائیں اُن کو اجازت ِذکر ِقلب ہو جائے گی ۔
محفل ِپاک میں نقابت کے فرائض مشیر پروگرام کمیٹی محمد افضال قادری نے سرانجام دئیے ۔اس محفل ِجشن ِشاھی کا باقائدہ آغاز قاری طارق محمو دقادری نے تلاوت ِکلام ِمجید سے کیا اسکے بعد مشہورومعروف نعت خواںجناب میاں عبدالمنان قادری نے اپنے مخصوص انداز میں سرور ِکونین ﷺکی بارگاہ ِاقدس میں اپنی عقیدت و محبت کا گلدستہ پیش کیا۔اسکے بعد عباد علی عباد قوال و ہمنوا نے جشن ِشاھی کا آغاز کیا ۔انہوں نے اپنے مخصوص انداز میں سرکار شاہ صاحب کے حضور قصائد کے نذرانے پیش کئے جس کو حاضرین محفل نے بے حد سراہا۔جشن ِشاھی کا کیک کاٹنے کیلئے محمد صداقت عرف چھاجی گو ھر شاھی زو ن کا نام قرائاندازی میں نکلاجنہوں نے کیک کاٹا۔اسکے علاوہ محمد صدیق ڈان (مشیر رابطہ کمیٹی و تنظیمی امور)نلے والاغوث ِاعظم ؒزون اور ندیم اکبر (ناظم آباد،فیصل آباد)کا کوٹری شریف آنے جانے کا ٹکٹ نکلا ۔مرکزی عالمی امیر حضرت علامہ مولانا سعید احمد قادری نے اختتامی دعا فرمائی اور ملک خداداد پاکستان کی ترقی و خوشحالی اور امن و امان کے قیام ،مرشد ِپاک کی محبت ،مشن کی ترویج و اشاعت کے لئے خصوصی دعائیں کیں۔محفل ِکے اختتام پر حاضرین کی کثیر تعداد کے لئے سحری کا وسیع انتظام کیا گیا تھا۔

16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (10) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (11) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (12) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (1) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (2) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (3) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (4) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (5) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (6) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (7) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (8) 16-06-2016 Pix. Salana Jashn e Wilayat e GOHAR SHAHI(M.A) Fsd (9)

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان