الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

شب بیداری بسلسلہ شبِ برأت

June 14, 2014

عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشانِ اسلام (رجسٹرڈ)پاکستان، فیصل آباد کے زیرِ اہتمام آستانہ عالیہ پر شب برأت کے سلسلہ میں خصوصی محفلِ پاک کا انعقاد کیاگیاجس میں نقابت کے فرائض محمد افضال قادری نے سرانجام دئیے۔صلوۃ التسبیح ادا فرمانے کے بعد مرشدِ پاک حضرت سیّدنا ریاض احمد گوھر شاھی مد ظلہ العالی کے خطاب ذیشان کو پروجیکٹر پر دیکھایا گیا جس کو شرکاء محفل نے بہت سراہا۔بعدازاں محفلِ پاک میں حمدِ باری تعالیٰ کی سعادت محمدصدیق ڈان اور رضوان اشرف قادری نے حاصل کی ۔اسکے بعد نعتِ رسولِ مقبول بحضور سرورِکونین ﷺڈاکٹر محمد ناصر اور عبدالمنان قادری نے پیش فرمائی۔
محمد افضال قادری نے شب برأت کی اہمیت بیان کرتے ہوئے کہاکہ ہمارے پیارے آقاخاتم المرسلین ﷺنے فرمایا’’شعبان کو باقی تمام مہینوں پر ایسی فضیلت حاصل ہے جیسے مجھ کو تمام انبیاء اکرام پر‘‘اسی مبارک مہینہ میں پندرھویں شب جس کو شب برأت و شب رحمت و نصرت کے نام سے موسوم کیا جاتاہے اور بہت ہی مبارک رات ہے ۔جس کے متعلق قرآنِ کریم اعلان فرمارہا ہے’’اس روشن کتا ب کی قسم !ہم نے اس (قرآن پاک) کوبرکت والی رات میں اُتارا۔بے شک ہم ڈر سنانے والے ہیں اس میں ہر حکمت والا کام تقسیم کردیا جاتا ہے ’’اس بابرکت رات میں اللہ تعالیٰ کی مخصوص رحمتوں اور برکتوں کا نزول ہوتا ہے ۔ رحمت کے دروازے کھلتے ہیں انعام و اکرام کی بارش ہوتی ہے اس شب مبارکہ کی سب سے نفیس ترین برکت اللہ رب العزت کا جمال ہے جو عرش سے تحت الثریٰ تک اپنے عموم فیض سے ہر ذرے کو نوازتا ہے حدیث مبارکہ کے مطابق بنی کلب کی بکریوں کے بالوں کی تعداد سے زائد امت کے افراد کی بخشش ہوتی ہے (سنن ابنِ ماجہ )اسی نورانی شب میں گنہگارامت کی مغفرت ہوتی ہے سائلوں کو عطاء کیا جاتاہے ۔گناہ معاف ہوتے ہیں توبہ قبول ہوتی ہے اللہ تبارک وتعالیٰ درجے بلند کرتا ہے اور سب کو آغوشِ رحمت میں لے لیتا ہے مگر حدیث مبارکہ کی رو سے مشرک ،کینہ پرور ،رشتہ داروں سے تعلق توڑنے والا ،تکبر سے کپڑا لٹکانے والا ، والدین کا نافرمان اور ہمیشہ شراب پینے والا اس نعمتِ عظمیٰ سے محروم رہتا ہے اور رحمت خداوندی اس کی طرف متوجہ نہیں ہوتی ۔لہٰذا ضروری ہے کہ شعبان کی پندرہ تاریخ سے پہلے بندوں کے حقوق ادا کئے جائیں ،کینہ ، بغض ،عداوت،قطع رحمی ،شراب نوشی ،والدین کی نافرمانی وغیرہ تمام چھوٹے بڑے گناہوں سے صدقِ دل سے توبہ کی جائے تاکہ اس مبارک رات کی برکات و حسنات سے مالا مال ہواجاسکے ۔جن کے دلوں میں ذکر اللہ کی شمع روشن ہو او سینوں میں عشقِ رسول ﷺ،محبت اہلِ بیت اطہارسمیت محبت اولیاء بھی موجود ہو تو اُن کے لئے یہ رات ہزاروں سالوں کی عبادت سے بھی افضل درجہ رکھتی ہے۔نئے ساتھیوں کو اجازتِ ذکرِ قلب حاجی محمد اویس قرنی نے دی۔
منصب علی قادری نے حضرت سیّدنا غوثِ اعظم جیلانی ؒ الحسنی والحسینی کی بارگاہِ اقدس میں منقبت کا نذرانہ پیش فرمایا۔محمد حسن قادری نے مرشدِ پاک حضرت سیدنا ریاض احمد گوھر شاھی مدظلہ العالی کے حضور قصیدہ کی سعادت حاصل کی ۔ممبر مجلس شوریٰ محترم جناب حاجی محمد اویس قرنی نے حلقہء ذکر کو ترتیب دیااور محمد افضال قادری نے مرحومین کیلئے خصوصی دعائے مغفرت فرمائی۔اختتامِ محفل پر سحری کا خصوصی اہتما م کیا گیا تھا۔

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان