الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

ماہانہ روح پرورمحفل ِگیارھویں شریف جولائی 2017

July 7, 2017

اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے محمد افضال قادری نے کہا کہ یہ حقیقت ہے کہ ولی کادر ایسا دَر ہوتا ہے کہ جہاں پر آکر بہت سارے خطیب بنتے ہیں ،نقیب اور ثناء خواں بنتے ہیں ۔یہ حقیقت ہے کہ ہمارے اس سٹیج سے بہت سارے نامور ثناء خوان ِرسول ﷺپیدا ہوئے ہیں کہ جنہوں نے عالمگیر شہرت کو حاصل کیاہے ۔ہم سب یہاں پر اپنے دامن ِدل کو بھرنے کیلئے بیٹھے ہیں۔جب آپ کے دامن ِدل کو بھر دیا جائے گا تو یقین کرو پھر تم عام نہیں رہو گے بلکہ خاص بن جائو گے ۔پھر بندہ،بندہ نہیں رہتا بلکہ بندہ نواز بن جاتا ہے ۔ہمارے پیرو مرشد حضرت سیدنا ریاض احمد گوھر شاھی مدظلہ العالی ارشاد فرماتے ہیں کہ ہم تم کو مرید نہیں بناتے بلکہ پیر بناتے ہیں ۔آج کی اس محفل کا کوئی مقصد ہے کہ ہم کافی دیر سے اس محفل ِپاک میں بیٹھے ہوئے ہیںجو نئے دوست آج کی اس محفل میں تشریف لائے ہیںوہ ہمارے خاص مہمان ہیں،باعث ِعزت و تکریم ہیں۔اُن کی روحانی وابستگی جہاں پر بھی ہے ہمارے لئے وہ باعث ِعزت ہیں۔آپ میں سے کون سے ایسے لوگ ہیں کہ جو یہ چاہتے ہوں کہ اُ ن کے دل کی دھڑکنیں اللہ اللہ کریں ۔میرا خیال ہے کہ سبھی چاہتے ہیں ۔جن کے دل اللہ اللہ کر رہے ہیںوہ تو خوش قسمت ہیںاور جو نئے آج کی اس محفل میں دوست ،احباب تشریف لائے ہیںوہ بھی نہایت ہی خوش قسمت ہیں۔کہ وہ آئے نہیں بلکہ اُن کو بلایا گیا ہے ۔بہت سارے ہزاروں ،لاکھوں لوگ ہیںجو گھوم پھر رہے ہیں ۔
محبوب کی محفل کو محبوب سجاتے ہیں آتے ہیں وہی جن کو سرکار بلاتے ہیں۔
وہ لوگ خدا شاہد قسمت کے سکندر ہیں جو سرور عالم کا میلاد مناتے ہیں۔
اصل میں اللہ پاک اپنا عشق آپ کو عطاء کرنا چاہتا ہے ۔اپنی محبت عطاء کرنا چاہتا ہے ۔اپنی پہچان عطاء کرنا چاہتا ہے اللہ ایک نور کا مرکز تھا ۔اپنے آپ کو دیکھنا چاہا۔سامنے ایک تصویر بن گئی ۔اللہ اُس پہ عاشق ہو گیا ۔سات روحیں اور اللہ کے نور سے پیدا ہوئیں۔کن کہا بے شمار روحیں بن گئیں۔بہت ساری سسکتی ہوئی روحیں ہیں کہ جن تک ابھی بھی اللہ کاپیغام نہیں پہنچاجو ابھی تک سیراب نہیں ہوئیں۔انجمن سرفروشان ِاسلام آج کے اس مادیت کے دور میں ،پر فتن دور میں آپ لوگوں کو یہ دل کا پیغام دے رہی ہے۔آپ کی روحوں کو سیراب کر رہی ہے ۔آپ کے سینوں کو عشق ِمصطفی ﷺسے منور کر رہی ہے کہ لوگو!آئو اور اپنے دلوں کو اللہ کے ذکر سے منور کر لو۔تبھی تو اعلیٰ حضرت لکھتے ہیں کہ چمک تجھ سے پاتے ہیں سب پانے والے میرا دل بھی چمکا دے چمکا نے والے
تو آج کی اس محفل میں جو نئے احباب تشریف فرما ہیں اور چاہتے ہیں کہ اُن کے دل کی دھڑکنیں بھی اللہ اللہ کریں ۔وہ کھڑے ہوں ،بیٹھے ہوں ،سو رہے ہوں ۔تین ہی حالتیں ہوتی ہیں زندگی میں ۔انسان یا تو کھڑا ہوتا ہے ،یا بیٹھا ہوتا ہے یا پھر سو رہا ہوتا ہے ۔تینوں حالتوں میں اللہ پاک نے فرمایا کہ میرا ذکر کرو۔جب تم نمازوں سے فارغ ہو جائو تو اللہ کا ذکر کرو ۔کھڑے بھی ،بیٹھے بھی حتیٰ کہ کروٹوں کے بل بھی(القرآن ) ۔حضرات ِمحترم !سوتے ہوئے زبان بند ہو جاتی ہے ۔تسبیح ہاتھ سے چھوٹ جاتی ہے ۔آنکھیں بھی بند ہو جاتی ہیں۔سویا اور مویا ایک برابر ہوتے ہیں ۔یہ دل ہی ہے جو چوبیس گھنٹے ٹک ،ٹک کرتا رہتا ہے ۔اس کی ٹک ،ٹک کو ،اس کی دھڑکنوں کو ہم اللہ اللہ میں تبدیل کر دیتے ہیں ۔جب انسان سوجاتا ہے تو دل پھر بھی دھڑکتا رہتا ہے ۔ہمارا پیغام ہے کہ اس کی دھڑکن جو جانوروں کی طرح ٹک ،ٹک کر رہی ہے اس کو اللہ اللہ میں لگائیے۔تو نئے ساتھیوں سے گزارش ہے کہ سرکار کے خصوصی از ن یافتہ حاجی محمد اویس قادری (چیئرمین مرکزی مجلس شوریٰ )کی آواز کے ساتھ آواز ملا کراللہ اللہ کی تکرار کریں آپ کو اجازت ِذکر ِالٰہی ہو جائے گی ۔اس کے نئے ساتھیوں کو اس دولت ِنایاب سے نوازا گیا ۔ڈاکٹر محمد مشتاق قادری نے اجازت ِذکر ِقلب کے متعلق کہاکہ آج جن لوگوں کو یہ دولت ِعظمیٰ ملی ہے وہ مبارک باد کے مستحق ہیں کیونکہ تاریخ کے دریچوں میں جھانک کر دیکھیں تو پتہ چلے گا کہ یہ اتنا سستا سودا نہیں ہے بلکہ بہت ہی نادر و نایاب ہے کہ طالبین ِحق کو عبادت و ریاضت کی سخت مشقتیں اُٹھانا پڑتی تھیں اور اُن میں سے صرف چند ہی ہوتے ہیں کہ جن کو یہ ساری صعوبتیں برداشت کرنے کے بعد مرشد کی طرف سے یہ نایاب دولت عطاء کی جاتی تھی بلکہ اکثر کی زندگیاں اس کی تلاش میں ہی ختم ہو جاتی تھیں لیکن آج اللہ تعالیٰ کا خاص فضل و کرم ،حضور ِپاک ﷺکی خاص نظر ِرحمت اور مرشد ِپاک حضرت سیدنا ریاض احمد گوھرشاہی مدظلہ العالی کے طفیل ہمیں نا تو در در کی بھیک مانگتی پڑتی ہے ،نا بھوکا پیاسا رہنا پڑتا ہے اور ناہی ننگھے گھومایا جاتا ہے بلکہ ہم مرشد ِپاک کے طفیل گھر گھر جاکر اس پیغام ِخاص کو پہنچا رہے ہیں۔دعا ہے کہ اللہ پاک مرشدپاک کوہم سے راضی فرمائے اور دراصل اُن کی رضا میں ہی رسول ِخدا ﷺاور رب تعالیٰ کی رضا مضمر ہے ۔
میاں عبدالمنان قادری نے نعت شریف پڑھتے ہوئے کہاکہ میرے علم میں یہ بات آئی ہے کہ سب سے اچھی موت ذاکرین کو آئی ہے کیونکہ وہ اللہ کے ذاکر تھے یعنی اللہ اللہ کا ذکر کرتے تھے ۔جہاں بھی ذاکر فوت ہوا ہے تو اُس کے بارے میں یہی پتہ چلا کہ بڑی اچھی موت نصیب ہوئی ہے کیوں کہ وہ اللہ کا ذاکر ہے دنیا کا نہیں ۔ذکر کرنے والا ہے ۔جس کا دل اللہ اللہ کرتا ہے وہ ذاکر ہے ۔بورے والا کا ایک ذاکر جس کانام محمد یونس قادری تھا وہ جگر کے عارضے میں مبتلا تھا ۔اُسے جگر میں رسولی تھی ۔طبیعت اچانک خراب ہو گئی ۔بابر سائیں سے رابطہ ہوا۔بابر سائیں نے اُس کا علاج شروع کیا وہ ٹھیک ہو گیا ۔وہ چلنے پھرنے لگ گیا اور کام کاج بھی شروع کردیا ۔اچانک پھر طبیعت بگڑ گئی ۔اُس نے اپنے گھر والوں سے کہا کہ اب جب میری طبیعت بگڑ جائے تو ذاکرین کو بلا کر کہنا کہ میرے پاس محفل ِنعت وذکر ِالٰہی شروع کر دیں ۔گھر والوں نے ایسا ہی کیاذاکرین اُس کے گھر آگئے اور انہوں نے محفل ِپاک کا انعقاد کیا ۔وہ لیٹا ہوا ہے ۔محفل کی گئی ۔اللہ ھو کا ذکر ہوا ۔درودوسلام پڑھا گیا ۔درودوسلام کے بعد ذاکرین نے دعا مانگی ہے ۔دعا کے بعد انہوں نے یونس بھائی سے کہا کہ یونس بھائی اُٹھو پانی پیو۔حضرات حضو رﷺکا ذکر سنتے ،سنتے روح پرواز کر گئی اور کسی کو پتہ تک نا چلااوروہ فوت ہوگئے ۔اس لئے اُس کی مغفرت اور درجات کی بلندی کے لئے دعاکریں کیونکہ آل ِپاک کی نظر میں بھی آیاا ور مرشد ِپاک کا چاہنے والا بھی تھا۔اللہ تعالیٰ اُس کی مغفرت فرمائے ۔(آمین)۔
ٓ یہ روح پرور محفل ِپاک آستانہ عالیہA.S.I. فیصل آباد پر منعقد کی گئی ۔اس محفل ِپاک کی صدارت امیر ِفیصل آباد حاجی محمد سلیم قادری نے کی ۔نقابت کے فرائض محمد افضال قادری اور ڈاکٹر محمدمشتاق قادری نے سر انجام دئیے۔نماز ِمغرب کی باجماعت ادائیگی کے بعد مناجات کا نذرانہ حاجی محمد اصغر قادری نے پیش کیا ۔اسکے بعد حمد ِباری تعالیٰ ،نعت ِرسول ِمقبول ﷺ،منقبت ِغوثیہؒ اور قصیدہ ٔمرشدی کی سعادت باالترتیب محمد رفیق قادری ،ضیاء المُصطفے ٰ،عاصم علی گوھر ۔افسر علی رضوی ،محمد معیز،ذیشان الٰہی ،میاں عبدالمنان قادری ،صابر حسین اور عبدالعزیز قادری نے حاصل کی ۔حلقہؐ ذکر الٰہی حاجی محمد اصغر قادری نے ترتیب دیا۔درودوسلام کے بعد خصوصی دعاحاجی محمد اویس قادری نے کرائی مرحومین کی مغفرت ،بیماروں کی شفا یابی اور وطن ِعزیز میں قیام ِامن کے لئے خصوصی دعائیں کی گئیں ۔آخر میں تمام حاضرین ِمحفل میں لنگر تقسیم کیا گیا۔

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان