الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

ماہانہ محفلِ گیارھویں شریف، پندرھویں شریف،سالانہ جشنِ ولادت، عرس مبارک داتا گنج بخشؒ

November 27, 2015

عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشانِ اسلام(رجسٹرڈ)پاکستان ،فیصل آباد کے زیرِ اہتمام آستانہ عالیہ فیصل آباد پر ماہانہ روح پرور محفلِ گیارھویں شریفؓ ، جشنِ شاھی ، جشنِ ولادت بسعادت مرشدِ کریم اورسالانہ عرس مبارک حضرت داتا گنج بخش علی ہجویری ؒ کے سلسلہ میں خصوصی محفلِ پاک منعقد کی گئی ۔جس میں نقابت کے فرائض محمد افضال قادری اورڈاکٹر محمد مشتاق قادری نے سرانجام دئیے۔محفلِ پاک کا باقائدہ آغاز قاری طارق محمود قادری نے تلاوتِ قرآنِ پاک سے کیا۔اسکے بعد حمدِ باری تعالیٰ کی سعادت محمد رضوان قادری نے حاصل کی۔حمدِ باری تعالیٰ کے بعد گلدستہ ء نعت بحضور سرورِ کون و مکاںﷺ محمد طاہر قادری ،قاری محمد عدیل قادری،محمد نعمان نقشبندی،محمد صابر بٹ اور عبدالعزیزقادری نے اپنے اپنے مخصوص انداز میں پیش کرکے حاضرینِ محفل کے دلوں میں محبتِ رسول ﷺکو مزید اجاگر کیا۔اس محفل پاک میں محمد افضل ڈوگر (چےئر مین)اور اُنکے نومنتخب نمائندو ں نے خصوصی شرکت کرکے اس روح پرور محفلِ پاک سے فیوض و برکات حاصل کیے اور انجمن کے مشن کو سراہا ۔اسکے علاوہ ریٹائرڈسب انسپیکٹررانا لیاقت ،محمد صابر بٹ،محمد رشید بٹ اور دیگر نے محفلِ پا ک میں شرکت کی۔
ممبر مرکزی مجلسِ شوریٰ حاجی محمد اویس قادری نے نئے ساتھیوں کو اجازتِ ذکر قلب کی نایاب دولتِ عظمیٰ سے نوازا۔منقبتِ غوثیہؓ کے بعد حضرت داتا گنج بخش علی ہجویریؒ کے حضور عبدالعزیزقادری نے خصوصی کلام پیش کیا۔آخر میں مرشدِ پاک کی بارگاہِ اقدس میں قصائد کے نذرانے محمد ذوالفقار قادری اورعبدالعزیزقادری پیش کئے۔امیر فیصل آباد حاجی محمد سلیم قادری نے حلقہء ذکر کو ترتیب دیا۔درودوسلام کے بعد ممبر مرکزی مجلسِ شوریٰ حاجی محمد اویس قادری نے اختتامی دعا کروائی ۔اختتامِ محفل پر تمام شرکاء محفل میں لنگر غوثیہ تقسیم کیا ۔
مرکزی مشیر محمد شفیق قادری نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم پر اللہ کا بہت شکر ہے کہ اس نے ہمیں ایک دفعہ پھر اللہ کی ان برگزیدہ ہستیوں کو خراجِ عقیدت و محبت پیش کرنے کی سعادت بخشی ۔ہمیں یہ سب کچھ سرکارﷺ کے نعلین کے صدقے سے مل رہاہے ۔اس لئے کہ عطاء کرنے والااللہ ہے اور تقسیم کرنے والے آقائے علیہ السلام ہیں ۔حضورِ پاک ﷺفرماتے ہیں کہ اللہ عطاء کرتا ہے اور میں تقسیم کرتا ہوں ۔کسی کو دا نا مل جاتا ہے ،کسی کو پانی مل جاتا ہے ۔کسی کو غوث الوراءؓ دے دئیے اور کسی کو گوھر شاھی عطاء کر دئیے۔یہ سب سرکارِ دوعالم ﷺکی کرم نوازی ہے۔ جو بھی روحانی ہستی اس دنیا میں تشریف لاتی ہے تو وہ آقاﷺکے صدقے سے تشریف لاتی ہے۔اس لئے کہ یہ سارا نورِ محمدیﷺہے۔
سرکار شاہ صاحب کے حوالے سے کچھ بات کر لیتے ہیں ۔25نومبر1941 ؁ء بمطابق 5ذی قعد1360ہجری سرکار کا یومِ ولادت ہے اور وقت وہ ہے جس کو سرکارِ دوعالم ﷺکی ولادت سے نسبت ہے ۔سرکار کے والدِ گرامی فرماتے ہیں کہ جب مجھے آپ کی ولادت کی اطلاع ملی تو اُس وقت فجر کی اذانیں ہو رہی تھیں ۔میرے مرشد کے یومِ ولادت میں بہت کچھ ہے ۔بہت نسبتیں ہیں ۔25نومبر1941 ؁ء 5ذی قعد1360ہجری ۔بہت سے واقعات ایسے ہیں جن کو 10 اور 11سے نسبت ہے جیساکہ محرم الحرام کا دن 10واں اور رات11ویں۔حضور پاک ﷺکو 12 ربیع الاول سے خصوصی نسبت ہے اور میرے مرشدِ پاک کی پیدائش کو 25نومبر سے ہے اورجشنِ ولایت 15رمضان المبارک کو ہے اور یہ انفرادی نسبت ہے۔لیکن وہ جو 10 اور 11کی نسبتیں ہیں ۔اسی طرح اللہ کے حروف ہیں 66۔۱ کا ایک ۔ل کے 3,3اور ہ کے 5۔6اور 6کو جمع کریں تو 12سے نسبت ہو جاتی ہے۔حضور ﷺکا نامِ گرامی ہے” محمدﷺ”۔” محمدﷺ”کے حرف ہیں 92 ۔9اور2کو جمع کریں تو11بنتے ہیں۔مرشد پاک کا نام ہے “ریاض”۔رکے حرف 200ے کے 10،اکا ایک(1)اور ض کے 800۔تمام کو جمع کرو تو1011بنتے ہیں ۔پہلے 10لکھو گے پھر 11لکھو گے۔ 25نومبر1941 ؁ء؛؛؛5ذی قعد1360ہجری ۔5کو پنجتن پاک سے نسبت ہے ۔3,1اور6کو جمع کرو تو 10بنتے ہیں۔دن 10واں اور رات 11ویں۔پھر ذی قعدکا مہینہ اسلامی سال کا 11واں مہینہ ہے اور نومبرکا مہینہ بھی عیسوی سال کا 11واں مہینہ ہے۔25نومبر5اور 2کو جمع کروتو 7سے تعلق بنتاہے۔7سلطانوں سے نسبت ہوجاتی ہے۔15رمضان المبارک1941 ؁ء میں کیا چھپا ہواہے؟1,4,9,1کو جمع کروتو 15بنتاہے۔15رمضان المبار ک کو 12ربیع الاول سے نسبت ہے۔تاریخ 12ہے اور ربیع الاول اسلامی سال کا 3مہینہ ہے ۔12اور 3کو ملاؤ تو 15بن جاتاہے۔میرے مرشد کی نسبت حضورِ پاک ﷺ سے ہے۔حضور ﷺکی ولادت کے دن تو آپ کو ولایت اوربہت سارے کمالات اور بہت سار ی اللہ رب العزت کی طرف سے کرم نوازیاں ہوئیں ہیں۔یہ 15رمضان المبارک کو ہیں۔چونکہ آج 15ویں شریف ہے اس لئے یہ باتیں کی جارہی ہیں ۔لوگ سمجھتے ہیں کہ اپنے مرشد کی تعریف کرتے رہتے ہیں لیکن جب موقع آتا ہے تو اللہ خود زبان سے نکلوا دیتا ہے کیونکہ یہ اُس نے ذمہ داری لی ہے کہ ”تم میرا ذکرکرومیں تمہارا ذکر کروں گا”۔تم مجھے یاد کرومیں تمہاراچرچا کراؤں گا۔
ذکرِ قلب کیسے ملتا ہے؟شریعت کی مکمل پابندی اور پاؤں کے ناخن سے لے کر سر کے بالوں تک اور اس کے بعد کم از کم 12سال جنگلوں میں جانااور جب نفس پاک ہواتو کوئی 12سال، کوئی 24 سال اور کوئی 36 سال تک ریاضت و عبادت کرتا رہا ۔نفس پاک ہونے کے بعد ذکرِ قلب عطاء ہو تا تھا۔جب غوث پاکؓ کا زمانہ آیا تو آپؓکا سلسلہ ہے قادری ،ظاہری۔غوث پاکؓ کسی کسی کو ذکرِ قلب دیتے تھے لیکن اکثر انہیں کو دیتے تھے جن کا نفس پاک ہو جاتا تھا۔ہر ولی کسی نہ کسی سلسلے سے ہوتا ہے لیکن جو خاص ولی ہوتے ہیں اُن کا اپنا سلسلہ ہوتا ہے۔پھر حضرت سخی سلطان حق باھوؒ کا دور آیا۔اُن کا سلسلہ قادری سروری ہے۔پہلے کچھ مدت انہوں نے سانس کا ذکر کروایا تاکہ سانس سے سینہ صاف ہو جائے پھر ذکرِ قلب دیا۔یہ درِ گوھر شاھی ہے۔کیسا بھی آیا ۔گنہگار،سیاہ کار،بدکار کیسا بھی آگیا ۔درِ گوھر شاھی پر آیا ۔نفس کی پاکی کا تقاضانہیں کیا۔سانس کے ذکر کا تقاضا نہیں کیا۔یہ سلسلہ قادری منتہی ہے۔جیسابھی ہے اُسے ذکرِ قلب عطاء کر دیا ۔جو لوگ ذکرِ قلب کو جانتے ہیں وہ کہتے ہیں کہ کیا اِنہوں نے مذاق بنایا ہوا ہے ؟ذکرِ قلب کو ئی آسان کام نہیں ہے۔لوگوں کی جانیں چلی جاتی ہیں ۔عمریں برباد ہو جاتی ہیں ۔
کراچی میں ایک سمندری بابا ہوتے تھے۔اُن کے پاس ذاکر جاتے تھے اور کہتے تھے کہ ہمارا دل اللہ اللہ کرتا ہے۔کہنا بے وقوف آدمی۔ذاکر کہتے ہمیں ہمارے مرشد نے دیا ہے۔کہتے کیا گوھر شاھی ہیں مذاق بنا رکھا ہے کہ ان بچوں کو ذکرِ قلب دے دیا ہے ۔اُن کے الفا ظ جو میں نے خود سنے ہیں ۔فرماتے ہیں جب ہم نے غو ر کیا،باطنی طور پر توجہ کی تو دیکھا کہ واقعی اللہ تعالیٰ نے گوھر شاھی کو یہ کمال دیاہے کہ وہ جس کو چاہیں اُس کا دل اللہ اللہ میں لگا دیں ۔میرے کہنے سے یہ کوئی بڑی بات نہیں بن جائے گی ۔اگر میرے مرشد کو پہچاننا ہے تو اُن کی تصانیف کا مطالعہ کرو۔بڑا عظیم ہے میرا مرشد ۔اُن کا رتبہ بہت بلند ہے۔اُن کی کتب کے کسی ایک لفظ پر غو ر کرلو خدا کی قسم !تم اللہ کی محبت میں واصل ہو جاؤ گے۔اب یہ تم پر منحصرہے کہ تم اسمِ ذات کی دولت حاصل کرکے اس نورانی اسم کو اپنے اندر کس قدرپختہ کرتے ہو؟کیونکہ اسے دل کی دھڑکنوں سے کرنا پڑتا ہے ۔اللہ اللہ بھی اند ر اور اُس کے نتیجے میں بننے والا نور بھی اندر ۔اس طرح یہ نورتمہاری نسوں سے خون میں شامل ہوجائے گا۔پھر جدھر جدھر خون جائے گا ،اُدھر اُدھر نور بھی سرائیت کرتا جائے گااور تمہارے اندر موجود باطنی ارواح کو بیدار کرتا جائے گا۔حضرت علی کرم اللہ وجہہ الکریم ارشاد فرماتے ہیں کہ تیرے اندر ایک جہان چھپا ہوا ہے اگر تو اس میں سے ایک کو بھی زندہ کرلے تو توُ مرکر بھی زندہ ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ میں(محمدشفیق قادری) گوجر خان میں سرکار کی بارگاہ میں حاضر تھا۔ ایک شخص آیا جو گھمگول شریف (زندہ پیر) جن کی سرکار نے تصدیق بھی فرمائی کہ وہ غوثِ زماں تھے، سے تعلق رکھتا تھا ۔سرکار نے ہمیں بھیجا بھی ہے کہ جاؤوہ غوثِ زماں ہیں ،اُن سے مل آؤ ۔اُس شخص نے سرکار سے ذکرِ قلب لیا تھا ۔عرض کرنے لگے سرکار میں اُدھر بھی جاتا ہوں اور آپ سے بھی ذکرِ قلب لیا ہے تومجھے بتائیں کہ میں ذکر کروں یا اُن کے پاس جاؤں ؟سرکار نے فرمایا۔ذکر بھی کرو اوراُن کے پاس بھی جاؤ جس میں طاقت زیادہ ہو گی ،کھینچ کے لے جائے گا۔اسکے علاوہ سالانہ عرس مبارک حضرت داتا گنج بخش علی ہجویری ؒ کے حوالے سے اُن کی روحانی تعلیمات پر روشنی ڈالی گئی ۔قبلہ سرکار شاہ صاحب ارشاد فرماتے ہیں کہ داتا صاحبؒ کا شماراُن خاص الخاص اولیا ء اکرام میں ہو تا ہے جن کے دربارِ اقدس پر سب سے زیادہ اولیاء اکرام ہمہ وقت موجود رہتے ہیں ۔داتا صاحب کی شان بیان کرتے ہوئے پیرو مرشد نے فرمایا کہ “داتا صاحب لاہورمیں اس طرح ہیں جیسا کہ ستاروں کے جھرمٹ میں چاند “

Mahana 11vein sharif aastana Fsd (1) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (2) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (3) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (4) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (5) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (6) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (7) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (8) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (9) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (10) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (11) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (12) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (13) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (14) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (15) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (17) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (18) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (19) Mahana 11vein sharif aastana Fsd (20)

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان