الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

ماہانہ محفلِ گیارھویں شریف ماہِ اکتوبر

October 10, 2014

عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشانِ اسلام(رجسٹرڈ)پاکستان، فیصل آباد کے زیرِ اہتمام آستانہ عالیہ پر ماہانہ روح پرور محفلِ گیارھویں شریف امیرِ فیصل آباد حاجی محدم سلیم قادری کی زیرِ صدارت منعقد کی گئی جس میں محترم شبیر بھائی نے خصوصی شرکت فرمائی۔محفلِ پاک میں نقابت کے فرائض ڈاکٹر محمد مشتاق نے سرانجام دئیے۔محفلِ پاک کاباقائدہ آغازمنصب علی قادری نے حمدِ باری تعالیٰ سے کیااسکے بعد محمد حسن قادری،عبدالعزیز قادری اور مہمان نعت خواں جناب میاں محمد طاہر آف دربار بابانور شاہ ولی عربی سرکارنے اپنے اپنے مخصوص انداز میں حضور خاتم النبینﷺکی بارگاہِ بے کس پناہ میں گلہائے عقیدت و محبت کے نذرانے پیش فرمائے۔
جنابِ محترم شبیر احمد نے اپنے پر اثر بیان میں ارشاد فرمایاکہ صد ہا شکر اُس ذاتِ پاک کا جس کے قبضہ قدرت میں میری اور آپکی جان ہے کہ اُس نے ایک دفعہ پھرہمیں اس مبارک موقع پر اکٹھے ہونے کا موقع فراہم کیا کہ اس کی بدولت ہم حضور غوث الثقلینؓکے فیضانِ کرم سے بہرہ ور ہو سکیں اور اپنے سینوں میں محبتِ غوثؓ،محبتِ رسولﷺ اور محبتِ الٰہی کو پیدا کر سکیں ۔شانِ غو ثِ پاکؓسے ہر کوئی واقف ہے لیکن مرشدِ پاک نے ارشاد فرمایاکہ ہم پورے سال میں اللہ تعالیٰ سے صرف ایک دن مانگتے ہیں وہ ہماری عید کا دن ہوتا ہے۔وہ غوثِ پاکؓ  کا دن ہوتا ہے جو کہ ولیوں کے تاج ور ہیں اور ولیوں میں ہمارے پسندیدہ ولی ہیں ۔مرشدِ پاک فرماتے ہیں کہ ہر ماہ آستانوں میں منعقدہ محفلِ گیارھویں شریف میں شرکت کیا کرو اگر کسی وجہ سے شرکت نہ کر سکوتو اپنے گھر پر گیارھویں شریف کی محفلِ پاک کا انعقاد کیا کرو اور روزانہ قصیدہ ٗغوثیہ پڑھا کرو نمازِمغرب کے بعدکیونکہ ہمارے ذکرِ قلب کی ضمانت غوثِ پاکؓنے دی ہے اور قبلہ مرشدِ پاک کے طفیل شروع سے ہی درودشریف کی محفل میں روزانہ قصیدہ ٗغوثیہ پڑھا جاتا ہے اور غوثِ پاکؓکے فیضانِ کرم سے فیضیاب ہوتے ہیں اس کا ایک ایک لفظ کرامت اور شان سے بھرا ہواہے۔فقیر نور محمد کلانچویؒ نے جب غوثِ پاکؓ کے دربار اقدس پر جانے کا ارادہ فرمایاتو آپ ؒ نے پاک و ہند کے ہر ولی اللہ کے دربارشریف پر حاضری دی اُن کا سلام لیاجب آپؒ روضہء مبارک پر پہنچے تو حضورسیّدنا عبدالقادر جیلانی قدس سرہ العزیزسامنے نظر نہ آئے ۔آپؒ پر رقت طاری ہوگئی اور آپؒ نے عرض کی کہ آپؓسے باطن میں ہزاروں ملاقاتیں رہیں ہیں آج میں ہزاروں میل دور سے آپؓسے ملاقات کیلئے حاضرِ خدمت ہواہوں لیکن میں آپؓ کی زیارت سے محروم ہوں۔اسی رقت بھرے انداز میںآپکی زبانِ اطہر سے یہ قصیدہ ٗغوثیہ ادا ہواکہ
کجائی شاہ محی الدین کجائی         چرادرمردمِ چشمم نیائی    ترجمہ:۔شاہ  محی الدین آپ کہاں ہیں ؟            آپ میری آنکھوں سے کیوں اوجل ہیں ؟
اللہ تعالیٰ نے بارہا مرتبہ قسمیں کھا کر ارشاد فرمایا کہ میں نے انسان کو احسن طریقہ سے پیدا فرمایاتو اے انسان!عقل و ہوش کے ناخن لے اوراس بات کو سمجھنے کی کوشش کر۔آدم ؑ سے لے کر حضور پاک ﷺتک کم و بیش ایک لاکھ چوبیس ہزارانبیاء اکرام کو اللہ تبارک وتعالیٰ نے ایک ہی پیغام دینے کا حکم فرمایا کہ انسان کومرتبہ ٗانسانیت تک پہنچا دیا جائے کیونکہ حضرتِ انسان کو خلیفہ بنایاگیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہر ایک نے لاالہ الااللہ کا درس دیااور یہ کلمہ ہر نبی کے کلمے میں موجود رہااور ہر نبی نے اپنے امتی کو اس کلمے لاالہ الااللہ کا ورد پکانے کا حکم دیا۔اس کلمے کو ہم بھی اور علماء اکرام نے بھی پڑھالیکن داتا صاحب،شہباز قلندرؒ ،بری امام سرکارؒ اور ہمارے پیرو مرشد حضرت سیّدنا ریاض احمد گوھر شاھی مد ظلہ العالی نے بھی اسی کلمے کا ذکر کیا اور اپنے خالق و مالک کو راضی کیا۔
قبلہ مرشدِ گرامی ارشاد فرماتے ہیں کہ ذکرِ قلب آسان ہے اور رب بھی بہت نزدیک ہے اگر تم سمجھنے کی کوشش کرو ۔جب کلمہ پڑھو گے تو اندر روشن ہوگاجب تم لا کہتے ہو یعنی نفی کرتے ہوکہ اللہ کے سوا کچھ نہیں ہے تو تمہارے اندر سے حسد ،لالچ اور دنیاکی طمع نکل جاتی ہے تو پھر تمہارے اندر سے جواب آتا ہے بے شک اللہ تو ہی سب کچھ ہے ۔اپنی ہر دھڑکن میں اللہ اللہ بسالو۔یہ عام فیض نہیں۔ شبیر بھائی نے مزید کہا کہ اسکی قیمت سرکار شاہ صاحب نے ادا کی ہے یہ فیض انبیاء اکرام سے اماموں تک اور اماموں سے غوثِ پاکؓ  تک پہنچا اور مرشدِپاک کے طفیل ہم گنہگاروں کو عطاء ہوا۔مرشدِ پاک کی عظمت پوچھنی ہے تو وقت کے غوث سے پوچھو۔سید صفدر حسین شاہ بخاری ؒ سے پوچھو۔سمندری بابا ؒ سے پوچھومکھنڈ شریف کے ایک بزرگ نے فرمایاکہ آپ (ذاکرین )کوبہت مہنگا سودا ملا ہوا ہے ۔جہاں سب دعاؤں کی انتہا ہو جاتی ہے وہاں سے اس در کے فضل و کرم کی ابتدا ہوتی ہے۔سرکار شاہ صاحب اُس وقت تک آرام نہیں فرماتے جب تک ہر ذاکر کے احوال کو دیکھ نہ لیں ۔تنظیم سرکار سے ہے اور سرکار تنظیم سے ہیں جو اس سے باہر کی بات کرتا ہے وہ شیطان کے بہکاوے میں ہے اسے اپنا محاسبہ کرناچاہیے۔تنظیم منظم ہونے کانام ہے اور ستاروں کے مجموعہ سے انجمن بنتی ہے اب یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم ان ستاروں کی حظاظت کیسے کرتے ہیں ۔اُن کے دکھ دردکا کس طرح مداوا کرتے ہیں اور مل جل کر انکی مشکلات کاکس طرح ازالہ کرتے ہیں ۔اللہ تعالیٰ آج کی اس حاضری کو اپنی بارگاہِ اقدس میں مرشدِ پاک کے طفیل منظورومقبول فرمائیں۔
جناب میاں محمد طاہر نے منقبتِ غوثیہ اور منقبتِ امامِ عالی مقام بھی پیش فرمائی۔ڈاکٹر محمد ناصر نے قصیدہ ء مرشدی پیش کیا۔ جنابِ محترم شبیر احمدنے حلقہء ذکر کو ترتیب دیا ۔درودو سلام کے بعدحاجی محمد اویس قرنی نے مرحومین کے ایصالِ ثواب،بیماروں کی تندرستی،سیلاب زدگان کی بھلائی اور مملکتِ خداداد پاکستان کی فلاح و بہبود،کامیابی و کامرانی،ترقی و خوشحالی کیلئے خصوصی دعا فرمائی۔

DSCN4953 DSCN4958 DSCN4959 DSCN4960 DSCN4961 DSCN4963 DSCN4968 DSCN4976 DSCN4981 DSCN4982 DSCN4983 DSCN4984 DSCN4985 DSCN4997 DSCN5004 DSCN5010 DSCN5012 DSCN5014 DSCN5017 DSCN5019 DSCN5021

 

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان