الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

محفلِ شب بیداری بسلسلہ شب برأت فیصل آباد

June 3, 2015

عالمی روحانی تحر یک انجمن سرفروشانِ اسلام فیصل آباد کے زیرِ اہتمام آستانہ عالیہ پر شب برأت کی با برکت اور مقدس رات کے فیوض و برکات سے مستفیض ہونے کیلئے محفلِ پاک کا انعقاد کیا گیا جس میں نقابت کے فرائض ڈاکٹر مشتاق احمد قادری اور محمد نسیم آرائیں نے سرانجام دئیے۔محفلِ پاک کا باقاعدہ آغاز صلوٰۃ التسبیح کے بعد تلاوتِ کلامِ مجید سے قاری طارق محمود قادری نے کیا۔حمدِ باری تعالیٰ کی سعادت منصب علی قادری نے حاصل کی۔بارگاہِ رسالتِ مآب ﷺ میں گلہائے عقیدت و محبت کے نذرانے محمد صابر قادری،محمد حسن قادری،محمد فیصل شوکت اورعبدالمنان قادری نے پیش کیے۔قاری محمد عدیل قادری نے منقبتِ غوثیہؓ اور قصیدہ مرشدی کانذرانہ پیش کیا۔ محسن علی بہادرنے درودوسلام کا نذرانہ پیش کیا ۔بعد ازاں ممبر مرکزی مجلس شوریٰ جناب محمد شفیق قا دری نے اختتامی دعافرمائی۔آخر میں تمام حاضرین محفل کے لئے سحری کا انتظام کیا گیا تھا۔
حضرت علیؓ سے مروی ہے کہ حضورِ پاک ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ شعبان کی پندرھویں رات قیام کیا کرو اور صبح روزہ رکھا کرو۔یہ بخشش اور مغفرت کی رات ہے ۔اللہ تعالیٰ سے مانگنے کی رات ہے ۔اس رات بنی قلب کی بکریوں کے بالوں کے برابر انسان کے گناہ مٹا دئیے جاتے ہیں۔حضور پاک ﷺ فرماتے ہیں کہ جبرائیلِ امین میرے پاس آئے اور عرض کی۔یارسول اللہﷺ!شعبان کی پندرھویں رات کو اللہ تعالیٰ آسمانوں پر اپنی خاص تجلی فرماتا ہے۔دوسری روایت میں ہے کہ آسمانوں پر نزول فرماتا ہے اور فرماتا ہے کہ ہے کوئی بخشش مانگنے والا میں اُس کو بخش دوں؟ہے کوئی روزی مانگنے والا میں اُس کو روزی دوں ؟ہے کوئی مصیبت زدہ میں اُس کوعافیت دوں؟بس بندوں کو چاہیے کہ اس رات میں خوب عبادت کریں اور اپنے گناہوں کی معافی مانگیں اور پندرھویں تاریخ کوروزہ رکھیں اللہ تعالیٰ اس رات اپنی مہربانی سے بے شمار بندوں کو بخشتا ہے لیکن کا فر ،مشرک اور کینہ رکھنے والے کو اور قاتل کو نہیں بخشتا(مشکوۃ شریف)۔ حضورِپاکﷺنے پوچھا کہ جبرائیل !یہ آواز کب تک آتی ہے توجواب دیا کہ یہ آواز فجر تک آتی ہے ۔مغرب سے لے کو فجر تک اللہ کی رحمت برس رہی ہوتی ہے۔اُس کی رحمت کا عالم یہ ہے کہ حضرت عیسیٰ ؑ ایک پہاڑ پر چڑھے ۔پہاڑ پر ایک سفید رنگ کاخوبصورت پتھر دیکھا ۔بڑے خوش ہوئے ۔اللہ نے فرمایا کہ اے میرے پیغمبر! میں تجھے اس سے بھی بہتر چیز نہ دکھاؤں؟عرض کی مولا!ضرور دکھا۔پہاڑ پھٹ گیا دیکھا ایک بزرگ آدمی ہاتھ میں عصا لئے انگوروں کے درخت کے پاس اللہ تعالیٰ کی عبادت و ریاضت میں مصروف ہے۔پوچھا آپ کب سے ادھر ہیں ؟کہا میں 400سال سے اللہ کی عبادت کر رہاہوں۔عرض کی اے اللہ!کوئی اس سے بڑھ کر بھی تیرا عبادت گزار ہوگا؟اللہ نے فرمایا اے میرے عیسیٰ ؑ ہاں!میرے محبوب جناب محمدرسول اللہﷺکی امت میں شعبان کی پندرھویں رات کو جو دو(2)نفل ادا کرے گا اُس کی عبادت اس سے بھی زیادہ ہو گی۔عیسیٰ ؑ نے عرض کی مولا!پھر مجھے بھی امتِ مصطفی ﷺمیں سے اُٹھا لے۔امتی کون ہے جس کی زبان اقرار کرے اور دل تصدیق کرے ۔جب تک دل تصدیق نہیں کرتا ایمان والا نہیں بنتا۔امتی بننے اللہ کا کرم سمیٹنے کیلئے اور ایسی راتوں سے فیضیا ب ہو نے کیلئے دلوں میں نور پیدا کرنا ضروری ہے اور امتی ہونے کیلئے ضروری ہے کہ آپ کے دل میں تصدیق ہو ۔اللہ اللہ کی تصدیق ہو ۔
جو یہ چاہیں کہ اُن کے دل میں اللہ اللہ بس جائے ۔سینے میں آقائے علیہ السلام کی سچی محبت بس جائے۔اُٹھتے ،بیٹھتے ،چلتے پھرتے ہر وقت دل اللہ اللہ کرے وہ ایک دفعہ اجازتِ ذکرِ قلب حاصل کرکے چند دن حلقہء ذکر میں بیٹھ کر اپنی قسمت آزمائیں ۔

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان