الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

محفلِ گیارھویں شریف ماہ اکتوبر 2015 فیصل آباد

October 12, 2015

عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشانِ اسلام(رجسٹرڈ) فیصل آباد کے زیرِ اہتمام آستانہ عالیہ پر ماہانہ روح پرور محفلِ گیارھویں شریف نہایت تذک و احتشام سے منعقد کی گئی جس میں حضرت علامہ مولانا مفتی سعید احمد نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم اللہ کے ولی کے درِ اقدس پر اُن سے روحانی فیض حاصل کرنے اور اُن سے ملاقات کرنے کیلئے نہیں آئے بلکہ بلائے گئے ہیں۔اللہ کے ولی کے پاس جانا ،اُن کا راستہ پوچھنااور اُن کی سنت پر عمل کرنا نیا کام نہیں بلکہ یہ اللہ کے نبیوں کا کا م ہے۔15ویں پارہ کی سورۃ کہف کے آخری رکوع میں جنابِ موسیٰ ؑ نے عرض کی مولا کریم! مجھے اپنا کوئی دوست ملا ،میں اُس سے ملنا چاہتا ہوں جس کو تو پسند کرتا ہو ،جو تیرا پیارا ہو ،تیرا ولی ہواور جس سے تیرا بہت زیادہ قرب ہو۔مجھے اُس کا پتہ بھی بتا اور ملاقات کی اجازت بھی مرحمت فرما یعنی مجھے اپنا کوئی محبوب بندہ ملا دے جو مجھے وہ نورِ ہدایت دے جس کی وجہ سے وہ تیرا محبوب بندہ بنا !موسیٰ ؑ کا شمار اولوالعزم انبیاء اکرام میں ہوتا ہے جو نبی بھی تھے اور رسول بھی تھے اور آپ ؑ کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ ہمارے پیارے آقاﷺ کے بعد سب سے زیادہ معجزے آپؑ کو عطاء ہوئے۔آپ ؑ رب تعالیٰ سے براہِ راست کوہِ طور پر جا کر ہمکلام ہوتے تھے ۔اللہ تعالیٰ نے راستہ بھی بتایا اورنام و پتہ بھی سمجھایا کہ دریا کے راستے کے ساتھ ساتھ چلتے جانا وہاں مجمع البحرین ایک جگہ آئے گی۔ وہاں تجھے میرا پیارا مل جائے گا۔اللہ رب العزت نے یہ نہیں فرمایا کہ اے میرے موسیٰ ؑ تیرا تو مجھ سے ڈائریکٹ رابطہ ہے تجھے کیا پڑی کسی اور کے پاس جاؤ اور اُس سے ملاقات کرو؟بلکہ خالقِ کائنا ت نے ارشاد فرمایا کہ وہاں جاؤ اور ملاقات کرو۔موسیٰ ؑ 13 دن کی مسافت طے کر کے مجمع البحرین پر پہنچے تو دریاسے گزرنے کیلئے اس کے درمیا ن پتھر کا راستہ بن گیا اور دریا کے بیچ میں ایک چٹان پر جنابِ خضر ؑ سے ملا قات ہوئی ۔اگر اللہ کے ولیوں کے پاس جانا اور ان کی اطاعت کرنا شرک ہوتا تو اللہ تبارک وتعالیٰ کبھی بھی اپنے موسیٰ ؑ کو حضرت خضر ؑ کے پاس نا بھیجتااور اللہ کے نبی یہ کام نہ کرتے اور اگر اللہ کے نبیوں نے ایسا کیا اور رب کو یہ کام پسند آیا تو آپ کو اور مجھے بھی ان اولیا ء اللہ سے ملنے سے کوئی نہیں روک سکتا ۔جب حضرت موسیٰ ؑ وہاں پہنچے تو خضر ؑ نے دریافت کیا کہ تم کہاں اور یہاں کیسے پہنچے؟ تو جنابِ کلیم اللہ نے جواب دیا کہ میں ایسے ہی نہیں آیا بلکہ اللہ سے اجازت لے کر آیا ہوں اور آپکا نام و پتہ مجھے میرے رب نے خود بتایا ہے ۔جب اللہ کے ولی کے پاس جاؤ تو اُس سے دنیانا طلب کروبلکہ جب ملاقات نصیب ہو جائے تو سلام عرض کرنے کے بعد اس سے کہو کہ جو نور اللہ تعالیٰ نے آپ کو دیا ہے اُس میں سے تھوڑا سا مجھے بھی عنایت کر دیں تاکہ اُس نورِ ہدایت کو پا کر میں بھی رب تک پہنچ جاؤں اور اس سے ملا قات کر لو ں ،اس کا دیدار کر لوں ۔ولی کا تو کام ہی یہی ہے بندے کا تعلق دنیا سے توڑ کررب سے جوڑ ے یعنی اس کے دل سے اس دنیا کی محبت کو نکال کر اللہ ،رسول کی محبت پیدا کر دے ۔بندے کے دل کو دنیا سے موڑ کر اللہ کی طرف لگا دینا حقیقتاً یہی اللہ کے ولی کا کام ہے ۔ جب موسیٰ ؑ جنابِ خضر ؑ سے ملے تو سفر شروع کرنے سے پہلے عرض کی میں تو آپ کے پیچھے تب چلوں گا جو نورِ ہدایت رب نے تجھے دیا ہے اس میں سے تھوڑاسا مجھے بھی دے دیں۔جس بنیاد پر جس علم کی وجہ سے رب نے تمہیں دوست بنا یا ہے اس میں سے مجھے بھی کچھ حصہ چاہیے۔
میں نے اپنے ولیوں کو ایسی قوت دی ہوتی ہے کہ وہ کمان سے نکلے ہوئے تیر کو واپس لا سکتے ہیں اور وہ جہاں چاہیں اس تیر کو روک سکتے ہیں ۔کیا دنیا میں کوئی ایسا آلہ (میزائل) ایجاد ہوا ہے بھلے وہ گائیڈ ڈمیزائل ہی کیوں نہ ہوجو اس چلے ہوئے میزائل کو واپس لا سکے۔اللہ تعالیٰ نے اپنے ولیوں کو یہ کمال عطاء کیا ہے کہ وہ کمان سے نکلے ہوئے تیر کو واپس موڑسکتے ہیں۔اگر وہ تیر کو بھی حکم دیں کہ آگے نہیں جانا تو وہ آگے نہیں جاتا بلکہ وہیں رک جاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ 85%مریدوں کو مرید کے مطلب کا ہی پتا نہیں ۔10%کو مرید کے لفظ کا تو پتا ہے لیکن اُس کے معنی کا پتا نہیں اور5%مرید ایسے ہوتے ہیں جنہیں مرید کا بھی پتا ہے ،معنی کا بھی پتا ہے اور مراد کیا لینی ہے اُس کا بھی پتاہے۔وہ 5%لوگ ہمارے اس سلسلہ ء طریقت میں ایسے ہوتے ہیں جنہیں اپنی مراد کی خبر ہوتی ہے۔ہمارے اس ملک میں جہاں لٹریسی ریشو بہت کم ہے اور ہماری آبادی کا بیشتر حصہ دیہات میں رہتا ہے ۔انہیں کیا پتا کہ مرید کیا ہوتا ہے اور پیر کیا ہوتا ہے ؟اگر آپ کی طلب سچی ہے تو مُرشدِ پاک اُسی وقت وہ نورِ معرفت عطاء کر دیتے ہیں جو انہیں رب نے عطاء کیا ہوتا ہے۔وہ اللہ کے ولی پھر 12سال،24سال یا 36سال کے چلے،وظیفے نہیں کرواتے بلکہ آنیوالے طالبِ حق کو اُسی وقت واصلِ بااللہ کر دیتے ہیں ۔اپنے اند ر وہ سچی طلب اور خلوص پید اکرو۔اُن سے دنیا کا مال و متاع طلب نہ کرو بلکہ اُن سے وہ نور حاصل کرنے کی کوشش کروجس کی وجہ سے وہ اللہ کی بارگاہ میں مقبول و منظور ہو ئے ۔جب وہ نورِ ہدایت تمہیں عطاء ہو جائے گا تو تم پر باطنی راز آشکا ر ہو جائیں گے اور اللہ کی معرفت نصیب ہو جائے گی۔ اسی لئے حضرت سلطان باھو ؒ نے ارشاد فرمایا تھاکہ “”طالب بیاں طالب بیاں طالب بیاں تا رسانم روزِ اول بخدا””یعنی اے طالب آ،اے طالب آ،اے طالب آ طالبِ پروردگا ر بن کے آ خدا کی قسم! تمہیں پہلے ہی دن رب سے ملا دوں گا۔
اس محفلِ پاک میں نقابت کے فرائض محمد افضال قادری نے سرانجام دئیے۔حمدِ باری تعالیٰ کی سعادت محمد جمیل قادری نے حاصل کی۔اسکے بعد نعتِ رسولِ مقبول بحضور سرورِ کون و مکاںﷺ محمد صابر قادری،عبدالمنان قادری اور عبدالعزیز قادری نے پیش کی۔منقبتِ غوث الوراءؓ محمد بشیر قا دری نے پیش کی۔ممبرمرکزی مجلس شوریٰ حاجی محمد اویس قرنی نے نئے ساتھیوں کو اجازتِ ذکرِ قلب دی ۔قصیدہ ٗ مرشدی کی سعاد ت عبد العزیز قادری نے حا صل کی۔حلقہء ذکر کے بعد دروسلام پڑھا گیا ۔اس محفلِ پاک میں محمد افضل ڈوگرامیدوار چےئر مین UC-93اور محمد وسیم نلکیاں والاامیدوار وائس چےئر مین نے محمد عثمان غنی کے ساتھ بطور مہمانِ خصوصی شرکت کی اور دیگر شرکاء محفل کی طرح اس روحانی ،وجدانی محفلِ پاک کے فیوض و برکا ت سے مستفیض ہو ئے اور پیرو مرشد حضرت سیدنا ریاض احمد گوھر شاھی مدظلہ العالی کی روحانیت پر مبنی تعلیمات کو دل و جان سے سراہا۔اُن کو قبلہ مرشد گرامی کی تصانیف کا تحفہ بھی دیا گیا۔آخر میں مرحومین کے ایصالِ ثواب خصوصا بورے والہ کے امیر جناب محمد اکرم کے ایصالِ ثواب ،ملکِ خداداد پاکستان کی سلامتی اورامن و امان کے قیام کے لئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔اختتامِ محفل پر لنگر تقسیم کیا گیا ۔

11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (12)

11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (1) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (2) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (3) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (4) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (5) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (6) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (7) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (8) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (9) 11vein sharif 02-10-2015 aastana A.S.I Fsd  (11)

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان