الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

محفل شب بیداری بسلسلہ معراج ا لنبیﷺ فیصل آباد

May 17, 2015

عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشانِ اسلام(رجسٹرڈ) فیصل آباد کے زیرِ اہتمام آستانہ عالیہ پر شبِ معراج النبیﷺکے مبارک ،متبرک اور بابرکت موقع پر شب بیداری کا اہتما م کیا گیا ۔صلوۃ التسبیح کے بعد محفلِ پاک کا باقاعدہ آغاز طلحہ عظمت نے قرآنِ پاک کی آیاتِ بینات سے کیا۔اسکے بعد منصب علی قادری نے حمدِ باری تعالیٰ کا نذرانہ پیش کیا۔منصور احمد اور محمد حسن نے اپنے اپنے مخصوص انداز میں بارگاہِ رسالتِ مآب ﷺ میں نذرانہء عقیدت و محبت پیش کر کے حاضرینِ محفل کے دلوں میں عشقِ مصطفیﷺ کو مزید گرمایا۔منقبتِ غوثیہؓ کی سعادت محمد عدیل قادری نے حاصل کی۔بارگاہِ مرشدی میں قصیدہ کی سعادت عبدالمنان قادری نے حاصل کی۔امیرِ حلقہ کے فرائض حاجی محمد اصغرقادری نے سرانجام دئیے۔ممبر مجلسِ شوریٰ محمد شفیق قادری نے اختتامی دعا کروائی۔اختتامِ محفل پر سحری کا خصوصی انتظام کیا گیا تھا ۔
ممبر مجلسِ شوریٰ محمد شفیق قادری نے اپنے خیالا ت کا اظہار کرتے ہو ئے کہاکہ حضرت بابا فرید الدین گنجِ شکرؒ شبِ معراج کیلئے فرماتے ہیں کہ حدیثِ پاک میں آیاہے کہ حضور نبی کریم ﷺنے ارشاد فرمایاکہ آج کی شب ستر ہزار ملائکہ (فرشتے)نور کے طباق لئے زمین پر نازل ہوتے ہیں اور ہر گھر میں جاتے ہیں جس گھر میں جو شخص بیدار ہو اور گناہوں سے دور ہوتو اللہ کی طرف سے حکم ہو تا ہے کہ وہ نور کے طباق اس پر نثار کریں ۔یہ بیان کرتے ہوئے حضرت بابا فریدالدین گنج شکر ؒ کی آنکھوں میں آنسو آگئے اور فرمایا افسوس کہ انسان اپنے آپ کو اس نعمت سے محروم رکھتے ہیں اور اللہ تعالیٰ کے کام میں غفلت کرتے ہیں۔حضرت خواجہ معین الدین چشتی اجمیری ؒ فرماتے ہیں کہ آج کی شب رحمت کی شب ہے جو کوئی اس کو زندہ رکھے گا اللہ تعالیٰ کی بے حساب رحمت سے محروم نہ رہے گا۔
ایک سوال ہوتا ہے کہ ایک خاص وقت میں اتنی طویل اور عظیم سیر کیسے ہوگئی ؟علماء نے یہ نقطہ بیان فرمایا ہے کہ نبی اکرم ﷺ بمنزلہ روح ہیں اور یہ کائنات بمنزلہ جسم ہے اور جب جسم سے روح نکل جائے تو جسم مردہ ہو جاتا ہے تو جب نبی کریم ﷺاس کائنات سے نکل گئے تو کائنات مردہ اور ساکن ہو گئی ۔آسمانوں ،زمینوں سورج اور سیاروں کی گردش جہاں تک پہنچی تھی وہیں رک گئی اور جب آپﷺکائنات میں داخل ہوئے تو وہ گردش وہیں سے پھر شروع ہوگئی اور آپ ﷺ گھر آئے تو آپ ﷺ کا بستر اسی طرح گرم تھا اور زنجیر بھی ہل رہی تھی ۔وضو کا پانی بھی جاری تھا جن چیزوں کے ساتھ نبی اکرم ﷺکی معراج کا تعلق تھا انہیں اللہ نے اپنے حال پر متحرک رکھا اور ان کے علاوہ باقی کائنات کو بے جان اور ساکن کردیا تھااور جب آپ ﷺ سفر معراج سے واپس تشریف لائے تو پھر ہر چیز وہیں سے حرکت کرنے لگی جہاں سے آپﷺ چھوڑ کر گئے تھے۔
اس کے متعلق اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان بریلوی ؒ ارشاد فرماتے ہیں کہ
وہ جو نہ تھے تو کچھ نہ تھا وہ جو نہ ہوں تو کچھ نہ ہو جان ہے وہ جہان کی جان ہے تو جہان ہے ۔
مرشدِ پاک ارشاد فرماتے ہیں کہ اللہ تعالیٰ کے 99نام ہیں ۔98صفاتی ہیں ۔صرف 1 اللہ ذاتی ہے جو صرف حضورِ پاک ﷺ کو عطاء ہوا ۔ہر نبی کو صفاتی اسم عطاء ہوا اور اسی وجہ سے موسیٰ ؑ کوہِ طور پر رب کی تجلی برداشت نہ کرسکے اور حضورِ پاک ﷺکے جسم میں اسمِ ذات اللہ کا ذاتی نور تھا ۔شبِ معراج میں حضورِ پاک صاحبِ لولاک ﷺجسمانی طور پر معراج پر تشریف لے کر گئے ۔ذات ذات کے سامنے جا کرمسکرائی۔یہ اسم حضور پاک ﷺ کے طفیل اس امت کو عطاء ہوا لیکن افسوس امت اس سے بے خبر ہے۔حضور پاک ﷺنے ارشاد فرمایا جس میں نور ہو گا وہ میرا امتی ہو گا اور قیامت کے دن امتوں کی پہچان نور سے ہو گی ۔جس میں ذرہ بھر بھی نور ہو گا وہ جہنم میں نہیں جائے گا ۔آج کے اس مادیت پرستی کے دور میں انجمن سرفروشانِ اسلام یہی پیغامِ خاص دے رہی ہے کہ اپنے اندر اسمِ ذات اللہ کا ذاتی نور پیدا کر لواور اپنے دل کی خالی دھڑکنوں میں اللہ اللہ بسا لیں ۔ایک دفعہ اجازت ذکرِ قلب حاصل کرکے دل کی دھڑکنوں میں اللہ اللہ بسانے کی کوشش کریں ۔کیونکہ حضورِ پاک ﷺجسم سمیت عرش پر تشریف لے کر گئے اور اس امت کے ولی اپنی روحوں کو جگا کر اللہ تعالیٰ کے دیدار کو پہنچتے ہیں ۔

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان