الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا رسول اللہ الصلوٰ ۃ والسلام علیک یا حبیب اللہ
Subscribe: PostsComments

محفل ِپاک بسلسلہ عید ملن پارٹی

June 26, 2017

آستانہ عالیہ عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشان ِاسلام (رجسٹرڈ)فیصل آباد کے زیر ِاہتمام آستانہ عالیہ پر سالانہ محفل ِپاک بسلسلہ عید ملن پارٹی امیر فیصل آباد حاجی محمد سلیم قادری کی زیر ِصدارت منعقد کی گئی جس میں نقابت کے فرائض محمد افضال قادری (انچارج شعبہ پروگرام کمیٹی)نے سرانجام دئیے۔اس پر مسرت موقع پر اللہ تبارک وتعالیٰ کے حضور ہدیۂ شکرانہ پیش کرنے کیلئے محفل ِپاک کا انعقاد کیا گیاجس میں حمد و نعت ،مناقب در ِشان غوث الورائؒاور مرشد ِبرحق کی بارگاہ ِاقدس میںقصائد کے نذرانے پیش کئے۔اس موقع پر عبدالعزیز قادری( مشیر شعبہ نشرواشاعت )نے کہاکہ ہم نے رمضان المبارک کی مبارک اور رحمتوں بھری پرنور اور پر کیف روحانی ساعتوں میں اللہ تعالیٰ کے حضور اس ماہ ِمقدس کے روزے رکھے اور ساتھ ہی عبادت و ریاضت ،محافل نعت و ذکر الٰہی سے اپنے باطن کو صاف کرنے کی کوشش کی ۔جس نے جس قدر خلوص پیش کیا اُسے اُس سے بڑھ کر نوازا گیا۔آج ہم عید سعید کے اس پرمسرت موقع پر رب کا شکر اداکرنے کیلئے جمع ہوئے ہیں ۔مرشد ِپاک نے اپنے خطابات ِعالیہ میں ذکر ِالٰہی کی طرف خصوصی توجہ دلائی کہ آخری دور میں جب امام ِزمانہ کا ظہور ہوگا تو اُس وقت اُن کاساتھ دینے والوں میں تمہارابھی نام آجائے لیکن اُ س کیلئے قبلہ مرشد ِگرامی نے ذکر ِقلب کی شرط رکھی کیونکہ جب قلوب اللہ کے ذکر سے آباد ہوں گے تو اُن میں نور پیدا ہوگاجو کہ امام ِزمانہ کو پہچاننے میں معاون و مددگار ہوگا۔آپ نے ارشاد فرمایا کہ یہ اتنا سستا سودا نہیں ہے اور یہ ہر ایک کے نصیب میں بھی نہیں ہے ۔اصل میں جس شخص کے اندرنورپیدا ہو گاوہی اما م مہدی ؑکا ساتھ دے گا ۔انہوں نے مزید کہاکہ جب ذکر سے نور پیداہوتا ہے جو آپ کی نسوں سے ہوتاہوا پورے جسم میں گردش کرتاہوااُن سوئی روحوںکو جگاتاہے تو پھر یہ روحیں اپنے اپنے مقام پر جاگ کر اللہ کی حمد و ثناء بیان کرتی ہیں جس کا فائدہ اس حضرت انسان کو ہوتا ہے کہ جس نے اپنی سوئی ہوئی روحوں کو جگا لیا ۔اس مقصد کو حاصل کرنے کیلئے عمومی طورپر ہرجمعرات کو محفل ِذکر ِلطائف منعقد کی جاتی ہے اور خصوصی طور پر رمضان المبارک کی طاق راتوں میں ذکر ِلطائف کی محفل کا اہتما م کیا جاتا ہے ۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ سرکار تو چاہتے ہیں کہ جب مہد ی ؑاس دنیا میں تشریف لائیں تو یہ ذاکرین سب سے پہلے اُن کے ساتھ منسلک ہوجائیں۔اُ س کی ہمیں سرکار نے پہچان بھی کروا دی ہے کہ ہمیں اسمِ ذات اللہ ھو عطاء فرمایاہے کہ ہم دل کی دھڑکنوں سے اللہ اللہ پکاریں گے تو ہمارے دل اللہ کے نور سے بھر جائیں گے ۔پھرمہدی ؑدنیا کے کسی بھی کونے میں ہوں گے تو ہم اُن کو پہچان لیں گے اور صرف پہچانیں گے ہی نہیںبلکہ اُن کی طرف کھینچے چلے جائیں گے کیونکہ وہ نور علی نور ہوں گے ۔سرکار فرماتے ہیں کہ وہ بڑے نور والے ہوں گے اور وہ چھوٹے نور کو اپنی طرف کھینچ لیں گے ۔جس طرح مقناطیس چھوٹی چھوٹی لوہے کی چیزوں کو اپنی طرف کھینچ لیتاہے اسی طرح جن دلوں میں تھوڑا سابھی نور ہوگاوہ دل اُن کی طرف کھینچے چلے جائیں گے ۔جس طرح مرشد ِپاک نے فرمایا کہ کسی کو قلب کی اجازت مل جانایا کسی بندے کو ذکر ِقلب کی اجازت عطاء ہو جانایہ اتنا کٹھن کام ہے اور اسی طرح اپنے قلب میں اللہ کے ذکر کو بسالینا بڑا کٹھن کام ہے ۔ سرکار فرماتے ہیں کہ اس کا باقائدہ ایک پروسیس ہے سب سے پہلے اُس بندے کو اللہ کی بارگاہ میں پیش کیا جاتاہے ۔اُس کے مرشد کی طرف سے ۔اگراللہ ارشاد فرما دے کہ میں اس بندے کو اپنا دوست نہیں بنانا چاہتا تو پھر سرکارفرماتے ہیں کہ پھر کوئی نبی ،ولی اُس کو اللہ کا دوست نہیں بنا سکتا۔اگر اللہ اجازت نہ دے ۔لیکن اگر اللہ یہ فرمادے کہ میں اس کو اپنی محبت میں ،دوستی میں قبول فرماتا ہو ں تو پھر وہ بندہ اللہ کی بارگاہ میں مقبول ہو جاتا ہے ۔سرکار فرماتے ہیں کہ پھردو وہ ولی جن کے درباروں پہ اُس کا آنا جانا ہوتا ہے ۔جن ولیوں کے ساتھ اُس بندے کا تعلق ہوتا ہے ۔وہ دو ولی اُس بندے کی گواہی دیتے ہیں۔پھر حضور غوث ِپاک ؒاُس بندے کی ضمانت دیتے ہیںپھر اللہ فرماتاہے کہ تصدیق کو ن کرے گا ؟تو پھر حضور ِپاک ﷺاُس بندے کی تصدیق فرماتے ہیں۔پھر کہیں جاکر ذکر ِقلب ملتا ہے ۔اب اُس ذکر ِقلب کو اپنے دل میں پیدا کرناہے ۔اس کیلئے ہمیں کوشش کرنی چاہیے۔نہ صر ف خود اللہ اللہ کریں بلکہ اس اللہ ھو کے پیغام کو دنیا کے کونے کونے میں پہچانے کیلئے سر دھڑ کی بازی لگادیں تو پھر بھی مرشد پاک کی کرم نوازی کا حق ادا نہیں ہو گا۔دوستو!جب ذکر ِقلب مل جاتا ہے اور جب سینے عشق ِمصطفی ﷺسے معمور ہو جاتے ہیں اور عشق ِمصطفی ﷺکی چنگاری سینوں میں بھڑک اُٹھتی ہے تونفرتیں ختم ہوجاتیں ہیں ،کدورتیں ختم ہوجاتی ہیں۔پھر نفاق ختم ہوجاتاہے اور اللہ کا ذکردل میں آجاتاہے اورمحبت ِمصطفی ﷺسینوں میں پیدا ہو جاتی ہے ۔اللہ رب العزت کی بارگاہ میں دعاہے کہ پیرو مرشد کے صدقے ہمارے دلوں کو اللہ کے ذکر سے منور فرمائے اور سینوں سے بغض ،حسد ،تکبراور کینہ جیسی لعنتوں کو نکال کرپیارے آقا ﷺکا سچااور پکا عشق عطاء فرمائے۔ آمین۔
آخر میں ذکر ِالٰہی کے بعد درودوسلام پیش کیا گیا اور چیئرمین مرکزی مجلس ِشوریٰ حاجی محمد اویس قادری نے خصوصی دعافرمائی ۔اختتام ِمحفل پر شرکاء کی مٹھائی اور کولڈڈر نک سے تواضع کی گئی اور تمام سرفروش ذاکرین آپس میں گلے ملے اور ایک دوسرے کو عید کی مبارک باد دی۔ٍ

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestmailby feather
انجمن سرفروشان اسلام (رجسٹرڈ) پاکستان